کالا جادو کرنا کروانا یا اس میں مدد کرنا ایک حرام عمل ہے۔

اسلام علیکم دوستو آن لائن دیکھا گیا ہے کی آجکل لوگ بہت سارے عمل پوسٹ کردیتے ہیں جو کہ انہوں نے خود بھی نہیں کیا ہوتے ایسے تمام عملیات جن کا تعلق کسی پڑھائی یا کسی جن کو تابع کرنے یا کسی پر عمل ڈالنے سے ہے ایسے عملیات براہ راست انسان کے دماغ پر اثر کرتے ہیں اس لیے اس کی سم کے عملیات کرنے سے دور رہے۔

عام طور پر ایسا بھی دیکھا گیا ہے کہ جو لوگ اس قسم کے عملیات کرتے ہیں ان کو خود بھی اس چیز کا علم نہیں ہوتا کہ جو عمل وہ پڑھ رہے ہیں کیا وہ اسلام کے مطابق ہے یا نہیں۔

اسی طرح بازار میں موجود مختلف کتابوں میں بھی لکھے گئے عملیات شرک پر مبنی ہوتے ہیں اور ہماری عام عوام یہ اس بات کو نہیں جانتے کہ جو عمل وہ کر رہے ہیں وہ اسلام قرآن و سنت کے مطابق ہے بھی یا نہیں۔

اس بات کو جاننے کے اگر آپ کوئی بھی عمل اسلام اور قرآن کے خلاف کرتے ہیں تو اس میں اللہ کی مدد آپ سے اٹھ جائے گی اور جب اللہ کی مدد کسی سے رخصت ہو جاتی ہے تو شیطان وہاں پر آ کر اپنا کام شروع کر دیتا ہے اس لئے ایسے تمام عملیات جن کے الفاظ سمجھ میں نہ آتے ہو ان کو کرنے سے گریز کریں ورنہ کل کو اللہ کے ہاں ہر چیز کا جواب دینا ہے۔

یہ تو وہ تمام عملیات کے بارے میں بات کی گئی ہے جن کا تعلق کسی سے یا کسی کی محبت سے یا کسی کو تابع کرنے کے لئے ہیں یہ کسی سے فائدہ اٹھانے کے لئے ہیں عام طور پر لوگ محبت کے عملیات کرکے لوگوں کے ذہن کی تصخیر کرلیتے ہیں۔

کیونکہ اللہ نے اس دنیا کے اندر دو ہی قسم کے راستے رکھے ہیں ایک راستہ اللہ کا راستہ ہے اور دوسرا راستہ شیطان کا راستہ ہے جب آپ اللہ کے راستے سے ہٹ جاتے ہیں اور شیطان کے راستے پر چلنا شروع کر دیتے ہیں تو اس قسم کے عملیات جو کہ غیر شرعی ہیں اور وہ جو جادو کا درجہ رکھتے ہیں ان تمام کے اندر شیطان کی مدد آپ کے ساتھ آ جاتی ہے جس سے تھوڑے وقت کے لیے آپ کو اس عمل سے فائدہ بھی ہوتا ہے۔

لیکن چونکہ اس عمل تک پہنچنے کے لئے آپ ایک غلط راستے کا انتخاب کرتے ہیں تو اللہ آپکی مدد کیسے کر سکتا ہے۔

اس لئے جہاں تک ہو سکے اس قسم کے عملیات سے خود بھی بچیں اور لوگوں کو بھی بچائیں اسی میں ہماری فلاح ہے اور اس دنیا کے اندر اگر ہم آئیں ہیں اللہ نے ہمیں بندگی کے لئے بھیجا ہے۔